صرف نیوز ہی نہیں حقیقی ویوز بھی

ناگپور: ووٹنگ لسٹ سے کئی لوگوں کے نام غائب، سوشل میڈیا پر غصے کا اظہار – Lok Sabha Election 2024

194,972

پہلے مرحلے کے انتخابات کے دوران ناگپور میں کئی لوگوں کے نام ریکارڈ سے غائب تھے حالانکہ وہ اس سے پہلے انتخابات میں ووٹ دے چکے تھے۔ ان میں بڑی تعداد اقلیتی طبقے کی ہے۔

ناگپور: ناگپور میں کل لوک سبھا انتخابات کے پہلے مرحلے کی ووٹنگ کے دوران کئی لوگوں کے نام ریکارڈ سے غائب تھے حالانکہ وہ اس سے پہلے انتخابات میں ووٹ دے چکے تھے۔ ان میں بڑی تعداد اقلیتی طبقے کی ہے۔ دھاریوالا نبیسہ راجہ بہادر باغ شانتی نگر کی رہنے والی ہیں۔ 2009 سے وہ ووٹ دے رہی ہیں لیکن اس لوک سبھا انتخاب میں جب وہ مقامی پولنگ بوتھ پر پہنچی تو اُن کے پیروں تلے زمین کھسک گئی، کیونکہ اُن کے کارڈ نمبر کی جگہ الیکشن کمیشن کے ریکارڈ میں کسی اور کہ نام تھادھاریوال نبیسہ کا الیکشن آئی کارڈ نمبر YGR1411123 ہے اور یہ 13 جون 2009 میں ایشو کیا گیا ہے لیکن جب اس کارڈ کے ساتھ وہ پولنگ بوتھ پر پہنچی تو ان کی جگہ جس کا نام تھا وہ رام چندر تُلسی رام ورامبھے ہے، اس طرح سے انہیں بنا ووٹ دیئے ہی واپس آنے پڑا۔نبیسہ کی طرح اقلیتی برادری سے کئی لوگ ہیں، جن کے نام ووٹنگ لسٹ سے غائب ہیں۔ کئی علاقوں میں لوگوں کو ووٹنگ سے محروم رکھا گیا ہے۔ اس کو لے کر سوشل سائٹس پر کچھ ویڈیو بھی وائرل ہوئی ہیں۔

ناگپور میں انتخابی مجبوری کے سبب نتن گڈکری کو گینگسٹر ابو خان گینگ کے لوگوں سے ہاتھ ملانا پڑا۔ ان کی کچھ تصویریں بھی وائرل ہوئی ہیں۔ تصویروں میں صاف لکھا ہے کہ ابو خان، جن کے خلاف تقریریں کی گئیں، پولیس انتظامیہ کو کارروائی کرنے کے لیے کہا گیا تھا۔نورالحسن جیسے آئی پی ایس افسر کی پیٹھ تھپتھپائی گئی اور مجرم صرف مجرم ہوتا ہے اور اس کی کوئی ذات نہیں ہوتی اور نہ ہی اس کا کوئی مذہب یہ کہہ کر راگ الاپے گئے تھے، نہ صرف ابو خان اور اس کے گینگ بلکہ اس کے تمام رشتہ داروں پر بھی سختی سے گھیرا تنگ کیا گیا۔ مجرموں کی صفائی کا پورا کریڈٹ بھی لیا گیا۔

حیرانی اس بات کی کہ جب انتخابات کا دور چلا تو مسلم کمیونٹی کو متحد کرنے کی کوشش میں نتن گڈکری انہی مجرموں کے ساتھ کھڑے تھے جن کو کبھی سزا دینے کی بات کی تھی۔ناگپور سے امیر اللہ ایک بڑا بزنس مین ہے جو مرکزی حکومت اور نتن گڈکری کے قریب جانا چاہتا ہے، پیشے سی تاجر اور گڈکری کی انتخابی ریلی میں مسلمان ووٹوں کے ذخیرے کو ان کی جھولی میں جمع کرنے کے لیے متوسط اور غریب طبقے پر مہربانی کی۔ امیر اللہ نے گڈکری کو گینگسٹر ابو خان کے خاندان سے بھی ملوایا، نتن گڈکری جیسے سیاسی رہنما حالانکہ وہ ان سب باتوں سے بے خبر تھے۔

تاج باغ اور شانتی نگر ایسے علاقے ہیں، جہاں ڈیڑھ لاکھ سے زائد مسلمانوں کے ووٹ ہیں۔ ان علاقوں میں کئی جگہوں پر لوگ ووٹ دینے سے قاصر رہے اور کئی جگہوں پر لوگوں کے نام ہی غائب تھے جس کی وجہ سے وہ ووٹ نہیں دے سکے۔

Leave A Reply

Your email address will not be published.