صرف نیوز ہی نہیں حقیقی ویوز بھی

مولانا رابع حسنی کاوصال ملت اسلامیہ کاخسارہ ممبئی

34,963

آل انڈیا مسلم پرسنل لاء بورڈ کے صدر اور دار العلوم ندوۃ العلماء کے ناظم مولانا سید محمد رابع حسنی ندوی کے انتقال پر گزشتہ شب ممبئی میں تراویح کی نماز کے بعد ایک تعزیتی اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے مقررین نے کہا کہ مولانا رابع حسنی کاوصال ملت اسلامیہ کاخسارہ ہے،اور ان کے علمی کارناموں اور انتظامی امور سے متعلق ان کی خدمات کو بھلایا نہیں جا سکتا ہے ۔لکھنو میں دار العلوم ندوۃ العلماء کے رکن شوری مولانا محمد ابراہیم ندوی نے کہا کہ مولانا رابع حسنی ندوی انتہائی متقی و پرہیز گار انسان تھے۔ وہ ندوہ سے ایک روپیہ بھی تنخواہ نہیں لیتے تھے جتی کہ کھانا بھی اپنے گھر سے منگوا کر کھاتے تھے اور مہمانوں کیلئے بھی اپنے گھر سے ہی کھانے کا انتظام کیاکرتے تھے۔

انہوں نے کہاکہ ندوہ کی تعمیر وترقی کیلئے وہ ہمیشہ فکر مند رہتے ان کا انتقال عالم اسلام کا بڑا خسارہ ہے۔صدر انجمن اسلام ڈاکٹر ظہیر قاضی نے کہا کہ فی الحال ملک کے حالات جتنے خراب ہوئے اس نازک دور میں مولانا رابع نے پرسنل لاء بورڈ کو جس طرح جوڑ کر رکھنے کا کارنامہ انجام دیا ہے، وہ انہی کے عظیم تدبر اور اعلیٰ ظرفی کا نمونہ تھا۔ نازک سے نازک ترین حالات میں بھی امت مسلمہ کو مایوس ہونے نہیں دیا بلکہ انتہائی صبر وتحمل کے ساتھ بورڈ کے کاموں کو آگے بڑھانے اور اس کو مضبوط کرنے کا کارنامہ انجام دیا،وہ ایک روحانی شخصیت کے مالک تھے ۔

مفتی حذیفہ قاسمی نے کہا کہ مولاناسیدمحمد رابع حسنی ندوی حسب ونسب علم وعمل میں ممتاز تھے، وہ جتنے عظیم انسان تھے اتنے ہی عظیم رہنما اور مربی تھے اللہ تعالیٰ نے انہیں ہمہ جہت صلاحیتوں سے نوازا تھا، وہ بہترین منتظم، اعلی دماغ رہنما تھے۔ مدیر ہندوستان سرفراز آرزو نے کہا کہ جب بابری مسجد کا فیصلہ آیا تو اس وقت امت میں ایک طرح کا انتشار پایا جاتا تھا، ملک کی پوری مسلم برادری پریشان تھی کہ اب آگے کیا ہوگا، بورڈ کے صدر کے صدر کی حیثیت سے آپ کا پیغام بہت ہی واضح اور مسلمانوں کو صبر و سکون بخشنے والا تھا اور آپ نے اپنے پیغام سے مسلمانوں کو یہ بتادیا کہ ہم مورچہ ضرور ہارے ہیں لیکن جنگ ہم نے ہی جیتی ہے۔

جماعت اسلامی کے صدرڈاکٹر سلیم خان نے کہا کہ امت میں اختلاف تو بہت ہے لیکن آپ کی شخصیت ایسی عالی تھی کہ امت کے ہر فرد کیلئے آپ قابل قبول تھے اور ہر جماعت کے لوگ آپ کی قیادت پر متفق تھے اور اطمینان وسکون سے آپ کی قیادت میں کام کرنے کو تیار تھے۔ پونے کے مولا نا نظام الدین فخرالدین ،ایڈوکیٹ یوسف حاتم مچھالہ، امن کمیٹی کے صدر فرید شیخ ،قاری محمد صادق خان، جمعیتہ اہل حدیث مہاراشٹر کے نائب صدر عبدالجلیل سلفی، مولانا شمیم اختر ندوی ، مولانا رئیس احمد ندوی بھیونڈی، مولاناراشد اسعد ندوی اور سعید احمد خان اور دیگر نے بھی خطاب کیا۔

Leave A Reply

Your email address will not be published.