صرف نیوز ہی نہیں حقیقی ویوز بھی

مہاراشٹر:کئی پارٹیوں کے ساتھ انتخابی سمجھوتہ کی قیاس آرائیوں کے بعد،راج ٹھاکرے نے لوک سبھا انتخابات "اکیلے”لڑنے کا فیصلہ کیا

67,004

  تمام قیاس آرائیوں کو ختم کرتے ہوئے، راج ٹھاکرے کی مہاراشٹر نونرمان سینا (ایم این ایس) نے ریاست کی تمام 48 سیٹوں پر آئندہ لوک سبھا انتخابات میں آزادانہ طور پر لڑنے کا فیصلہ کیا ہے، اس کااظہارپارٹی کے ایک اعلیٰ لیڈر نے پیر کو یہاں کیا۔سینئر لیڈر نتن سردیسائی نے کہا کہ یہ فیصلہ آج ایم این ایس کے صدر راج ٹھاکرے کے ذریعہ منعقدہ اعلیٰ عہدیداروں کے ساتھ تمام پارلیمانی حلقوں کی جائزہ میٹنگ کے بعد کیا گیا۔ تاہم، پارٹی نے راج ٹھاکرے ، شیوسینا (یو بی ٹی) کے صدر اور سابق وزیر اعلیٰ ادھو ٹھاکرے  کو مستقبل میں کسی بھی اتحاد یا گروپ میں شامل ہونے سے متعلق فیصلے لینے کا اختیار بھی دیا۔ 

یہ اقدام کلیدی لیڈروں کی ایک رپورٹ کے بعد آیا جنہوں نے گزشتہ چند ہفتوں میں لوک سبھا کے مختلف حلقوں کا دورہ کیا، مقامی اکائیوں، کارکنوں اور لیڈروں اور عوام سے ملاقات کی۔ سردیسائی نے کہا کہ چند اہم نشستوں کے حلقہ وار جائزہ اجلاسوں میں، دستیاب فیڈ بیک نے اشارہ کیا ہے کہ ایم این ایس کی طاقت – جو 2006 میں قائم ہوئی تھی – میں اضافہ ہوا ہے۔ 

دیگر رہنماؤں نے نشاندہی کی کہ ایم این ایس ذہنی طور پر پارلیمانی انتخابات میں اکیلے جانے کی تیاری کر رہی تھی اور آج کے غور و خوض کے بعد پارٹی اس امکان کے قریب پہنچ گئی ہے۔ایک اور لیڈر نے دعویٰ کیا کہ ریاست کے لوگ راج ٹھاکرے کو اگلے وزیر اعلیٰ کے طور پر دیکھ رہے ہیں اور پارٹی شہری اور دیہی مراکز میں اپنی بنیاد کو مزید مضبوط کرنے کی تمام کوششیں کرے گی۔پچھلے کچھ سالوں سے، ایم این ایس کے سیاسی موقف پر سسپنس تھا، کیونکہ راج ٹھاکرے کو حکمراں شیو سینا، بھارتیہ جنتا پارٹی اور دیگر کے لیڈروں کے  مشابہت کرتے ہوئے دیکھا گیا تھا۔

Leave A Reply

Your email address will not be published.