صرف نیوز ہی نہیں حقیقی ویوز بھی

مہاراشٹر کے ایک قصبہ کے مسلمانوں نے زکوٰۃ کی رقم سے 10 بستروں والا آئی سی یو یونٹ عطیہ کیا

213,695

ممبئی: ممبئی سے 380 کلومیٹر دور مہاراشٹر کے شہر اچل کرنجی شہر کے مسلمانوں نے حالیہ رمضان میں کمیونٹی ممبروں کے ذریعہ زکوٰ ۃمیں جمع کرہونے والے 36 لاکھ روپے میں 10 بستروں پر مشتمل آئی سی یو یونٹ عطیہ کرکے ایک شاندار مثال قائم کی ہے ۔

چیف منسٹر ادھو ٹھاکرے نے پیر کو اندرا گاندھی میموریل (آئی جی ایم) سول اسپتال کے آئی سی یو سیکشن کا افتتاح آن لائن افتتاح کیا جو ہندوستان میں عید کی تقریبات میں ایک نادر مثال ہے ۔ زکوٰۃ وہ رقم ہے جو ہر صاحب ثروت مسلمانوں پر سال میں اپنی ملکیت کا ڈھائی فیصد ادا کرنا ہوتا ہے جسے عوام الناس کی فلاح و بہبود میں خرچ کیا جانا ہوتا ہے۔

مسلم کمیونٹی کی کاوشوں کی تعریف کرتے ہوئے ادھو ٹھاکرے نے ویڈیو کانفرنس کے ذریعے کہا،’’اچل کرنجی کے مسلمانوں نے ملک میں ہر ایک کے لئے راہ دکھائی ہے‘‘ ۔ مسلم کمیونٹی نے تہوار منانے کی ایک نادر مثال قائم کی ہے۔ آئی سی یو کی سہولت کے ساتھ قریب 3 لاکھ آبادی پر مشتمل اچل کرنجی کا یہ پہلا سرکاری اسپتال ہے اور اسے کوویڈ 19 میں وبائی بیماری کے خلاف جنگ میں ایک اہم قدم کے طور پر دیکھا جا رہا ہے۔

اچل کرنجی میں مسلمانوں کی ایک تنظیم سمست مسلم سماج (ایس ایم ایس) نے رمضان کے مقدس مہینے کے دوران قصبے کے واحد سرکاری اسپتال میں 10 بستروں پر مشتمل آئی سی یو سہولت فراہم کرنے کا فیصلہ کیا کیونکہ پہلے مریضوں کو کولہا پور اور سولا پور جیسے شہروں میں بھیجا جاتا تھا۔ آئی جی ایم سول اسپتال سے وابستہ ایک سرجن ڈاکٹر جاوید باغوان نے کہا کہ اس بستی کے مسلمانوں کی یہ ایک بہت بڑی علامت  ہے۔ مجھے نہیں لگتا کہ ہندوستان میں کہیں بھی ایک پورے قصبے کے مسلمانوں نے زکوٰ ۃکی رقم کو اس طرح کی سہولت کے لئے استعمال کیا ہے، اس سے ہمیں کورونا وائرس سے لڑنے میں مدد ملے گی‘‘۔

ایک مقامی اخبار رہبر ٹائمز کے ایڈیٹر اورسمست مسلم سماج کے ایک رکن ندیم احمد نے بتایا کہ زکوٰ ۃفنڈ میں جمع شدہ 36 لاکھ روپے کی امداد کے لئے کمیونٹی کے ممبروں میں اتفاق رائے ہوا ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس بارے میں بحثیں ہو رہی تھیں کہ کیا اس مقصد کے لئے زکوٰۃکی رقم استعمال کی جاسکتی ہے لیکن آخر کار ہم نے اس بات پر اتفاق رائے کرلیا کہ عید پر ہمارے شہر کو یہ بہترین تحفہ ہوگا۔ امید ہے کہ اسے زیادہ دن تک یاد رکھا جائے گا۔

اچل کرنجی شہر کی تقریباتین لاکھ آبادی میں سے ، مسلمانوں کی تعداد 15فیصد کے لگ بھگ ہے۔ کوویڈ 19 سے مہاراشٹرسب سے زیادہ متاثرہ ریاستوں میں شامل ہے حالانکہاچل کرنجی  میں مثبت معاملات کی تعداد کم ہے۔ لیکن اگر مثبت معاملات میں اضافے کا سامنا کرنا پڑتا ہے تو ، آئی سی یو سے لیس سرکاری اسپتال ایک اعزاز ثابت ہوسکتا ہے۔

Leave A Reply

Your email address will not be published.