صرف نیوز ہی نہیں حقیقی ویوز بھی

ابو عاصم اعظمی کا سائیکل ریلی کے ذریعہ ڈیزل پٹرول کی بڑھتی قیمتوں پر احتجاج

65,455

ممبئی:عالمی کرونا وبا کے دوران ملک میں ڈیزل اور پٹرول کی قیمتوں میں بے تحاشہ اضافہ کے خلاف آج ممبئی میں سماجوادی پارٹی نے سراپا احتجاج کیا  سماجوادی پارٹی لیڈر و رکن اسمبلی ابوعاصم اعظمی نے ممبئی سے سائیکل ریلی نکال کر پٹرول اور ڈیزل کی قیمتوں میں اضافہ پر ریاستی سرکار پر سخت الفاظ میں تنقید کی اور اسے غریب مخالف قرار دیا اس کے ساتھ ہی ابوعاصم اعظمی نے تیل کی قیمتوں پر ناراضگی کا اظہار کرتے ہوئے سائیکل ریلی نکال کر گورنر ہاؤس میں جاکر میمورنڈم  بھی دیا  ہے جس میں مطالبہ کیا گیا  ہے کہ پٹرول اور ڈیزل کی قیمتوں  میں تخفیف کیا جائے کیونکہ اس سے مہنگائی اور افراط زر میں اضافہ ہونا کا اندیشہ ہے ۔

ابوعاصم اعظمی کے انوکھے احتجاج میں سائیکل پر ایک پلے کارڈ بھی لگایا گیا تھا جس میں تحریر تھا کہ عام آدمی اور کسان جھیل رہا ہے ڈیزل اور پٹرول کی مار۔۔۔ ابوعاصم اعظمی نے یہاں ممبئی میں احتجاجی مظاہرہ کے دوران مرکزی سرکار پر سخت حملہ کرتے ہوئے کہا کہ مرکزی سرکار ملک کی معیشت تباہ کر چکی ہے اور اب وہ ملک چلانے میں ہر محاذ پر ناکام ہے جبکہ انٹرنیشنل مارکیٹ میں تیل کی قیمتوں میں کمی واقع ہوئی ہے لیکن اس کے باوجود وطن عزیز میں روز افزوں پٹرول اور ڈیزل کی قیمت میں اضافہ ہو رہا ہے جس طرح سے ملک میں کرونا کے مریضوں میں اضافہ ہو رہا ہے اسی طرح مہنگائی میں بھی اضافہ درج کیا جارہا ہے۔

انہوں نے کہا کہ سرکار نے 20 لاکھ کروڑ روپئے کا پیکیج اور فنڈ فراہمی کا دعوی تو کیا ہے لیکن اس میں کتنے لوگوں کو فنڈ فراہم کئے ہیں صوبائی اور مرکزی سرکاریں یہ اعلان تو کر تی  ہے کہ کرایہ داروں سے کرایہ وصول نہ کیا جائے لاک ڈاؤن کے دوران کاروبار پوری طرح سے ٹھپ ہوچکے ہیں لاک ڈاؤن میں نرمی کے بعد دکانیں کھلنے کے بعد ہی گاہک ندارد ہے ایسی صورت میں چھوٹے کاروباریوں کیلئے سرکار کوئی فنڈ تک فراہم نہیں کر رہی ہے جبکہ مکان اور زمینداروں سے کرایہ نہ وصول کرنے کی اپیل کرتی ہے ایسے مکان مالکان جن کا انحصار کرایہ پر ہی ہے تو وہ کیسے اپنے گھر بار کی پرورش کریں گے کیا سرکار انہیں کرایہ ادا کریگی۔

آج پورے ملک میں روزی روٹی کا مسئلہ پیدا ہوگیا ہے عوام بھکمری کی جانب گامزن ہوچکے ہیں فاقہ کشی کی نوبت ہے اس کے باوجود سرکار صرف زبانی جمع خرچ تو کر رہی ہے اسی طرح سے اسکولوں سے لاک ڈاؤن کے دوران فیس نہ لینے ہدایت دے رہی ہے تو کیا سرکار ان اسکولوں کو فنڈ فراہم کرے گی انہوں نے کہا کہ انٹرنیشنل اسکولیں جن کی فیس سالانہ لاکھوں روپئے ہوتی ہے وہ تو اپنے اسکولیں کسی طرح سے چلا سکتے ہیں لیکن چھوٹی اسکولیں جس کے پاس فنڈ نہیں ہوتا ہے اور نہ ہی سرکار ان کی اعانت کر تی ہے تو وہ کیسے بغیر فیس وصول کئے اپنی اسکول چلا سکتے ہیں کیونکہ ان کا انحصار اسکول فیس پر ہی ہوتا ہے ایسے میں وہ کہاں سے اپنے غریب ٹیچروں کو دس ہزار یا پندرہ ہزار تنخواہ دیں گے اور پھر اگر اسکول تنخواہ نہیں دے گی تو کیا سرکار ان ٹیچروں اور اسٹاف کو تنخواہ دے گی انہوں نے کہا کہ سرکار ایسے تمام شعبہ جات اور کاروباری و تاجروں کو بغیر سودی قرض فراہم کرے جو کاروباری طور پر تباہ ہوچکے ہیں۔

اگر پٹرول اور ڈیزل مہنگا ہے تو اس پر سرکاری سبسڈی فراہم کرے تاکہ کرونا وائرس کے بعد سرکار مہنگائی سے اپنی جان نہ لے۔ انہوں نے کہا کہ سرکار پوری طرح سے ناکام ہوچکی ہے وہ دور پارنیہ کی جانب قدم بڑھا رہی ہے اس لئے میری درخواست ہے کہ پٹرول ڈیزل مہنگا ہونے کے بعد اپنی کاریں فروخت کر کے سائیکل چلائے۔ ابوعاصم اعظمی نے انتہائی سخت تنقید کرتے ہوئے مرکزی حکومت پر ملک کی معیشت کو تباہ کرنے کا سنگین الزام بھی عائد کیاہے اور کہا ہے کہ سرکار اپنی ناکامی اور غلط پالیسیوں کو چھپانے کیلئے طرح طرح کے ہتھکنڈے اور زبانی جمع خرچ اور لالی پاپ دیتی ہے اور عوام کو گمراہ کرنے کی کوشش کی جارہی ہے لیکن اب عوام سمجھ چکے ہیں کہ کس طرح ان کا استحصال کیا جارہا ۔

Leave A Reply

Your email address will not be published.