صرف نیوز ہی نہیں حقیقی ویوز بھی

کورونا بحران کے سبب گورنر کے کوٹے سے منتخب ۱۲؍ ممبران کی تقرری میں تاخیر کے امکان

255,690

ممبئی: گورنر کے ذریعہ نامزد کیے گئے قانون ساز کونسل کے ۱۰؍نامزداراکین آج سبکدوش  ہونے والے قانون ساز کونسل کے اراکین میں کانگریس پارٹی کے ۴؍ اور راشٹروادی کانگریس پارٹی کے ۶؍ اراکین شامل ہیں جن میں کانگریس کے حسنہ بانو خلفے ، جناردن چاندورکر ، آنندراو پاٹل ، رام ہری روپ نول کے علاوہ راشٹر وادی کانگریس پارٹی کے پرکاش گج بھئے، ودیا چوان ، راہول نارویکر ، خواجہ بیگ ، رام راو وڑکتے اور جگناتھ شندے ۔ان کے علاوہ  ۱۵؍ جون کوکانگریس کے اننت گاڈگل اورپیپلز ریپبلکن پارٹی کے پروفیسر جوگیندر کواڑے کی میعاد بھی ختم ہورہی ہے۔ اس طرح ۱۲؍ممبران کونسل سبکدوش ہو رہے ہیں۔

وضح رہے حال ہی میں قانون ساز کونسل کی ۹؍نشستوں کے لئے بلامقابلہ انتخاب ہوا جس میں وزیر اعلی ادھو ٹھاکرے سمیت۹؍ اراکین منتخب ہوئے تھے۔

راشٹروادی کانگریس پارٹی کےراہول نارویکر اور رام راو وڑکتے نے اسمبلی انتخابات لڑنے کے لئے استعفی دینے کے بعد ان دو خالی آسامیوں پر ممبروں کی تقرری کی سفارش کی گئی تھی مگر گورنر نے خالی آسامیاں پر نہیں کیں۔

گورنر کے کوٹے سے ادبی خدمات انجام دینے والے، سماجی خدمت گاروں کے علاوہ دیگر شعبہ جات میں بہتر کار کردگی کا مظاہرہ کرنے والے افراد کو نامزد کیا جاتا ہے۔

سیاسی ماہرین کا کہنا ہے کہ ریاست میں مہا وکا آگھاڑی کی جانب سے تجویز کردہ ناموں کی سفارش کی جائے گی۔ اس کے علاوہ شیوسینا ، این سی پی اور کانگریس کے بارہ ممبران کو گورنر کے کوٹہ سے  قانون ساز کونسل کا رکن منتخب کیا جائے گا۔ مہا وکاس آگھاڑی میں تینوں پارٹیوں کے چار،چار لیڈران کو موقع دیا جاسکتا ہے۔ جبکہ کورونا بحران اور دیگر مختلف وجوہات کی بناء پرگورنر کے کوٹے سے منتخب ہونے والے۱۲؍ ممبران کی تقرری میں تاخیر ہونے کے امکان کو بھی نظر انداز نہیں کیا جاسکتا۔ سیاسی مبصرین کا کہنا ہے کہ یہ معاملہ بھی راج بھون اور ریاستی حکومت کے مابین متنازعہ ہونے کی امید ہے ۔

Leave A Reply

Your email address will not be published.